دہشت گردی

درپردہ مذاکرات

درپردہ مذاکرات

[تحریر: لال خان] حکومت اور طالبان کے درمیان امن مذاکرات بس ہونے ہی والے ہیں۔ ریاست کے تمام دھڑے مذاکرات پر متفق ہوکر ’’قومی یکجہتی‘‘ کا تاثر دینے کی کوشش کررہے ہیں۔ دہشت گردی کی تباہ کاریوں اور مسلسل خوف و حراس سے اکتائے ہوئے عوام بھی کسی حد تک […]

فبراير 3, 2014 ×
بلوچستان کے گھاؤکب بھریں گے؟

بلوچستان کے گھاؤکب بھریں گے؟

اداریہ جدوجہد:- مستونگ میں ہزارہ کمیونٹی کا حالیہ قتل عام ماضی قریب میں شروع ہونے والے ایک ایسے سلسلے کی کڑی ہے جس کا انت پورے خطے میں بربریت کا بھیانک تناظر پیش کررہا ہے۔ شام اور مشرقِ وسطیٰ میں ایک دوسرے سے متصادم مذہبی آمریتیں پاکستان میں بھی معصوم […]

يناير 27, 2014 ×
کہیں کوئی آ نہ جائے!

کہیں کوئی آ نہ جائے!

[تحریر: لال خان] ملک میں بڑھتے ہوئی دہشت گردی کے ساتھ ریاست کے مختلف ادارے اپنی ناکامی اور بے بسی کو چھپانے کے لئے ’’سخت گیری‘‘ کا ناٹک بڑھاتے چلے جارہے ہیں۔ پولیس کے بڑھتے ہوئے ناکوں سے لے کر اہم شخصیات کے سیکیورٹی پروٹوکول میں سختی تک، عوام پر […]

يناير 25, 2014 ×
مذہبی درندگی۔۔۔آخر کب تک؟

مذہبی درندگی۔۔۔آخر کب تک؟

[تحریر: لال خان] 19 جنوری کو بنوں میں ہونے والے بم دھماکے میں ایف سی کے 22 اہلکار ہلاک ہوئے ہیں۔ 15 زخمیوں کی حالت تشویشناک ہے۔ 20 جنوری کی صبح راولپنڈی میں جی ایچ کیو کے قریب آر اے بازار میں بم دھماکے سے تیرہ افراد جاں بحق ہوگئے […]

يناير 20, 2014 ×
سامراجی جارحیت کی غارت گری

سامراجی جارحیت کی غارت گری

[تحریر: لال خان] جوں جوں افغانستان سے نیٹو فوجوں کے جزوی انخلا کا وقت قریب آرہا ہے، پاکستان میں سول سوسائٹی کے لبرل دانشوروں اور سیکولر سیاستدانوں کی جانب سے امریکی سامراج کے ’’نسبتاً ترقی پسند‘‘ ہونے کا شور شرابا بھی بڑھتا جارہا ہے۔ کرہ ارض کی سب رجعتی اور […]

يناير 18, 2014 ×
’’مذاکرات‘‘ اور ’’جنگ‘‘ کا کھلواڑ

’’مذاکرات‘‘ اور ’’جنگ‘‘ کا کھلواڑ

[تحریر: لال خان] طالبان کے ساتھ ’’مذاکرات‘‘ اور ’’جنگ‘‘ کا معاملہ سٹینڈ پر کھڑے اس سائیکل کے مانند ہے جس کا پہیہ تو گھوم رہا ہے لیکن باقی سب کچھ ساکت ہے۔ ’’اچھے طالبان‘‘ اور ’’برے طالبان‘‘ کی بے معنی اصطلاحات ایک بار پھر استعمال کی جارہی ہیں۔ یہاں ’’اچھائی‘‘ […]

يناير 15, 2014 ×
شناخت کا ابہام

شناخت کا ابہام

[تحریر: لال خان] ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین نے اپنے الفاظ کی حرارت میں اضافہ کرتے ہوئے 3 جنوری 2014ء کو یہ دھماکہ خیز بیان دیا ہے کہ وہ ’’اردو بولنے والے سندھیوں‘‘ کے لئے الگ صوبہ یا ملک بنانے کی طرف جائیں گے۔ یہ دراصل کراچی میں […]

يناير 6, 2014 ×
بنیادی پرستی کا چھلاوا

بنیادی پرستی کا چھلاوا

[تحریر:لال خان] لاہور میں مال روڈ پر یکم دسمبر کو منعقد ہونے والی ’’دفاع پاکستان کونسل‘‘ کی ریلی میں شریک افراد کی تعداد پانچ ہزار سے زیادہ نہ تھی۔ شرکاء کی اکثریت مدرسوں کے طلبا پر مشتمل تھی۔ نیلے گنبد سے ریگل چوک تک کے گنجان علاقے میں یہ ریلی […]

ديسمبر 4, 2013 ×
لبرل ازم اور قدامت پرستی

لبرل ازم اور قدامت پرستی

[تحریر: لال خان] ڈرون حملے ہوں یا ملالہ کی کتاب کا ’’معمہ‘‘، میڈیا پر ہونے والی ہر بحث و تکرار کو موجودہ نظام کی حدود و قیود تک محدود کر دیا جاتا ہے۔ آزاد خیال اور قدامت پرست، دونوں طبقہ فکر سے تعلق رکھنے والے دانشوروں اور تجزیہ نگاروں کی […]

نوفمبر 3, 2013 ×
امریکی انخلاء کے بعد افغانستان؟

امریکی انخلاء کے بعد افغانستان؟

[تحریر: لال خان] کاپوریٹ میڈیااور حکمران طبقات کے اہل دانش تمام تر سماجی تضادات کو حکمرانوں کے مابین سیاسی و معاشی اختلافات تک محدود کر کے رکھ دیتے ہیں۔ عوام کو حکمرانوں کے باہمی اختلافات میں الجھانے کی کوشش کی جاتی ہے۔ داخلی معاشی یا اقتصادی پالیسیاں ہوں یا افغانستان […]

أكتوبر 23, 2013 ×
کراچی: شہرِ بے اماں۔۔۔

کراچی: شہرِ بے اماں۔۔۔

[تحریر: پارس جان] کراچی ایک دفعہ پھر اخباری سرخیوں کی زینت بنا ہوا ہے۔ پھر سے نام نہاد ’آپریشن کلین اپ‘ شروع کر دیا گیا ہے جس کا نتیجہ بھی ماضی کی روایات کے مطابق پہلے سے زیادہ گندگی اور غلاظت کی صورت میں بر آمد ہو گا۔ صاف اور […]

أكتوبر 14, 2013 ×
عوامی بغاوت کا تناظر؟

عوامی بغاوت کا تناظر؟

[تحریر: لال خان] پاکستان میں عوام کے سماجی و معاشی حالات جس قدر سنگین ہوتے جارہے ہیں اس کے پیش نظر یہ سوال پیدا ہوتا ہے کہ یہ نازک اور ہولناک کیفیت کب تک جاری رہ سکے گی؟ بیشتر تجزیہ نگار امن و امان کی بگڑتی ہوئی صورتحال اور ریاست […]

أكتوبر 7, 2013 ×
آسیب کا سایہ ہے یا۔۔۔

آسیب کا سایہ ہے یا۔۔۔

[تحریر: لال خان] ہفتہ 21 ستمبر کی شام جب میاں نواز شریف اپنی کمزور تقریر میں لاغر، نحیف اور قلیل رعایتوں کا اعلان کررہے تھے تو شاید اس وقت دہشت گرد پشاور کے کوہاٹی بازار کے گرجا گھر کو تباہ کرنے اور عیسائیوں کا لہو بہانے کی تیاریوں میں مصروف […]

سبتمبر 23, 2013 ×
’’قومی سلامتی‘‘ اور ’’مصالحت کی سیاست‘‘

’’قومی سلامتی‘‘ اور ’’مصالحت کی سیاست‘‘

[تحریر: لال خان] سیاسی بازار میں ایک مرتبہ پھر ’’قومی سلامتی‘‘ کا منجن بیچا جارہا ہے۔ 1968ء اور اس کے بعد کے چند سالوں کی عوامی، انقلابی اور نظریاتی سیاست کے سوا، پچھلی چھ دہائیوں کے دوران عوام پر حکمرانوں کی سیاست ہی مسلط رہی ہے۔ ’’قومی سلامتی‘‘ کا نعرہ […]

سبتمبر 10, 2013 ×
افغانستان: امن کے ناٹک

افغانستان: امن کے ناٹک

[تحریر: لال خان] افغان صدر حامد کرزئی کی حالیہ دورہ پاکستان سے واپسی پر افغان وزارت خارجہ کا بیان، مذاکرات کی ناکامی کی غمازی کرتا ہے۔ حال ہی میں دوحہ میں قطری بادشاہت کے تعاون سے طالبان کے دفتر کے افتتاح کے بعد شروع ہونے والے ’امن مذاکرات‘ کا آغاز […]

سبتمبر 1, 2013 ×