ینگ ڈاکٹرز کی بھوک ہڑتال کا دوسرا دن؛ پی ٹی یو ڈی سی کی ملک گیر قیادت کا ہڑتالی کیمپ کا دورہ

’’ینگ ڈاکٹر کی جدوجہد اور مطالبات کی غیر مشروط حمایت کرتے ہیں‘‘ پی ٹی یو ڈی سی

’’بند دروازوں کے پیچھے کسی سے مذاکرات نہیں کریں گے، جو ہوگا عوام کے سامنے ہوگا‘‘ ڈاکٹر حامد بٹ

[رپورٹ: PTUDC لاہور]

ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کے بھوک ہڑتالی کیمپ کے دوسرے دن پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کیمپئین کی ملک گیر قیادت کے وفد نے اس کیمپ کا دورہ کیا اور ینگ ڈاکٹرز کے مطالبات کے ساتھ مکمل اتفاق کرتے ہوئے اپنی حمایت کا یقین دلایا۔ اس وفد میں پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کیمپیئن کے پورے پاکستان سے آئے ہوئے نمائندگان موجود تھے۔ رحیم یار خان سے کامریڈ حیدر چغتائی کی قیادت میں اس وفد میں مالاکنڈ سے کامریڈ غفران احد، وانا (جنوبی وزیرستان) سے کامریڈ علی وزیر،راجن پور سے کامریڈ رؤف لنڈ،دادو سے کامریڈ اعجاز بھگیو، حیدر آباد سے حنیف مصرانی، لاہور سے کامریڈ آدم پال اور دیگر موجود تھے۔ اس کے علاوہ کراچی سے آئے ہوئے PTUDC کے سیکرٹری انفارمیشن کامریڈ پارس جان بھی اس وفد میں موجود تھے۔ PTUDC کے قائدین نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ PTUDC ینگ ڈاکٹرز کے تمام مطالبات کی غیر مشروط حمایت کرتی ہے اور ہر قدم پر ینگ ڈاکٹرز کے ساتھ اس جدوجہد میں شریک رہے گی۔

YDA پنجاب کے سابق صدر حامد بٹ نے PTUDC کے وفد کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ ہماری آج تک کی لڑائی میں صرف PTUDCوہ واحد پلیٹ فارم ہے جس نے نہ صرف ہر قدم پر ہماری حمایت کی بلکہ ہماری آواز کو ملکی اور عالمی سطح پر باقی ٹریڈ یونینز تک بھی پہنچایا۔

YDA پنجاب کے اس بھوک ہڑتالی کیمپ کے دوسرے دن ابھی تک 11ڈاکٹرز کی طبیعت بگڑنے پر ان کو ہسپتال کی ایمرجنسی میں منتقل کر دیا گیا ہے مگر وہاں بھی ان ڈاکٹرز نے اپنی بھوک ہڑتال ختم کرنے سے انکار کر دیا ہے۔ اس کے ساتھ ہی جب کوئی ایک ڈاکٹر اس کیمپ سے ایمرجنسی میں منتقل ہوتا ہے توایک اور ینگ ڈاکٹر اس کی جگہ پر کرتے ہو ئے ا س کیمپ کا حصہ بن جاتا ہے۔ ینگ ڈاکٹرز نے کہا ہے کہ ہمیں مختلف حیلوں بہانوں سے بھوک ہڑتال ختم کرنے پر مجبور کیا جا رہا ہے مگر ہم اپنے مطالبات پورے ہونے تک اس بھوک ہڑتالی کیمپ کا جاری رکھیں گے۔ اس وقت تک جب تک پنجاب حکومت ہسپتالوں میں غریب مریضوں کے مفت علاج کے لئے درکار ضروری وسائل، فنڈز اور سہولیات فراہم نہیں کر دیتی، ینگ ڈاکٹرز اپنے احتجاج کا سلسلہ جاری رکھیں گے۔ مزید برآں ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کے سابق صدر ڈاکٹر حامد بٹ نے اس موقع پر کہا کہ ہمیں مختلف حکومتی اہلکار فون کرکے مذاکرات اور صلح صفائی کی پیش کش کر رہے ہیں لیکن ہم یہ بات واضح کر دینا چاہتے ہیں کہ بند دروازوں کے پیچھے کسی سے کوئی بات چیت نہیں کریں گے، جس نے مذاکرات کرنے ہیں وہ بھوک ہڑتالی کیمپ پر آئے اور عوام کے سامنے ہم سے بات کرے۔

متعلقہ:

عوام کو مفت علاج کی فراہمی کے لیے ینگ ڈاکٹروں کی بھوک ہڑتال