عالمی یومِ مزدور: ملتان، خانیوال اور بہاولپور میں ریلیاں اور جلسے

رپورٹ:PTUDCملتان:-

عالمی یومِ مزدور کے موقع پر شکاگو کے مزدوروں کو خراجِ تحسین پیش کرنے کے لیے دنیا بھر کی طرح ملتان میں بھی متعدد تقریبات احتجاجی ریلیاں ،جلسے اور سیمینار منعقد کئے گئے جن میں PTUDCکے ساتھیوں نے بھر پور مداخلت کی، طبقاتی جدوجہد پرچہ فروخت کیا اور خطاب کئے۔
*ملتان میں ریلوے کے ملازمین کی کم از کم تنخواہ 10000کرنے، پرائیویٹ ٹرینوں کی فوری طور پر بندش، تمام کنٹریکٹ ملازمین کو مستقل کرنے کے مطالبات کے گرد ایک احتجاجی ریلی کا انعقاد کیا گیا جو کہ لوکو شیڈسے شروع ہوکر سٹیشن پراختتام پذیر ہوئی۔ریلی سے خطاب کرتے ہوئے ملازمین نے کہا کہ آج پاکستان کے مزدوروں کے حالات شکاگو کے مزدوروں سے بھی زیادہ خراب ہیں ۔ انہیں بھی ہر روز خون کی میں نہلایا جاتا ہے۔تمام مزدوروں کو اس کے خلاف متحد ہو کر جدوجہد کرنا ہوگی۔

*یومِ مئی کے حوالے سے واپڈا ہائیڈرو یونین کے دفتر بختیار لیبر ہال میں ایک سیمینار کا انعقاد کیا گیا جس میں 400سے زائد مزدوروں نے شرکت کی۔تقریب کے آغاز میں کہا گیا کہ آج تجدیدِ عہد کا دن ہے اور ہم کے لیے کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے ۔سیمینار سے فدا حسین،محبوب عالم،بشیر احمد، محمد انور،شیخ عمران،غلام دستگیر میتلا،غلام سعید گجر نے خطاب کیا۔ کامریڈ ذیشان نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ 1886ء میں بھی مالکوں نے مزدوروں کے مطالبات تسلیم نہیں کئے تھے بلکہ ان پر گولیاں چلوائیں تھیں،حالات اب اور بھی بد تر ہو چکے ہیں۔واپڈا کے مزدوروں کو نجکاری کے خلاف بھرپورجنگ کرنا ہوگی۔نجکاری کئے گئے باقی اداروں اور ان کے مزدوروں کی صورتِحال بھی ہمارے سامنے ہے کہ ان کے ساتھ کیا حشر ہوا ہے۔ 8گھنٹے اوقاتِ کار کا مطالبہ 1886ء میں کیا گیا تھا،آج مزدوروں کو 4 گھنٹے اوقاتِ کار کا مطالبہ کرنا ہوگا تاکہ ان کی زندگیاں سہل ہو سکیں اور اس طرح بیروزگاری کا بھی خاتمہ کیا جا سکتا ہے ۔1968-69ء میں بھی واپڈا کے مزدوروں نے ہی تحریک کی قیادت کرتے ہوئے ایوبی آمریت کا خاتمہ کیا تھا، اورآج بھی ان کا کردار مزدور جدوجہد میں فیصلہ کن اہمیت کا حامل ہے۔سجاد بلوچ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ IRO2012کے ذریعے موجودہ حکومت نے متعدد یونین حقوق سلب کر لیے ہیں جن کے خلاف لڑائی لڑنے کی ضرورت ہے۔آغا حسین نے بات کرتے ہوئے کہا کہ آج مزدور طبقے کی ابتر حالت کا ذمہ دار سب سے پہلے خود مزدور ہے کہ یہ حکمرانوں اور انتظامیہ کی طرف ڈالی گئی کسی بھی پھوٹ کا آسانی سے شکار ہو جاتا ہے۔محنت کشوں کو یہ بات سمجھنی ہوگی کہ ان کی بقا ان کی یکجہتی میں ہے،اور یہی وہ ہتھیار بھی ہے کہ جس سے وہ دنیا فتح کر سکتا ہے۔حکمرانوں کی سیاسی ڈرامے بازیوں کا مزدوروں کے مسائل سے کوئی تعلق واسطہ ہی نہیں ہے،ملتان کے حاکم اپنے لیے فلائی اوورز بنوا کر ہم پہ احسان جھاڑنے کی کوشش کرتے ہیں۔انہوں نے آج تک مزدوروں کے لیے کچھ بھی نہیں کیا۔مزدوروں اس وقت یکجہتی کی ضرورت ہے۔یہ دنیا مزدور چلاتے ہیں اور صرف مزدور ہی اس کو بدلنے کی طاقت رکھتے ہیں۔اکرام علوی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ نجکاری کے انجام ہم سب واقف ہیں اور اس کے خلاف فوری طور پر سنجیدہ لائحہ عمل تیار کرنے کی ضرورت ہے۔

*Nestle اورUnileverفیکٹری کبیر والا کی سی بی اے یونین نے کبیر والا سے خانیوال شہر تک احتجاجی ریلی کا انعقاد کیا جس کی قیادت محمد حسین بھٹی نے کی۔ریلی میں 2500سے زائد مزدور شریک تھے۔ خانیوال کے مرکزی بازار میں پہنچ کر ریلی جلسے کی شکل اختیار کر گئی۔خطاب کرتے ہوئے محمد حسین بھٹی نے پولیس گردی کی شدید مزمت کی، اور نیسلے انتظامیہ کے مزدور دشمن ہتھکنڈوں کے خلاف ناقابلِ مصلحت لڑائی جاری رکھنے کا عہد کیا۔PTUDC جنوبی پنجاب کے جنرل سیکٹری کامریڈ جام سجاد نے خطاب کرتے ہوئے سوشلسٹ انقلاب میں نیسلے اور یونی لیور کے مزدوروں کے کردار کی اہمیت پر روشنی ڈالی اور کہا کہ پاکستان میں ایک اور 1968-69ء جیسے انقلاب کے حالات تیار ہو چکے ہیں اوراب کی بار اس ملک کے محنت کش انقلاب کے سوشلٹ تقاضوں کو مکمل کرتے ہوئے اسے منطقی انجام تک پہنچائیں گے۔

*بہاولپور میں PLB کے ڈویژنل صدر صادق علی نوشاد کی زیرِ صدارت عالمی یوم کے مزدور کے حوالے سے سیمینار کا انعقاد کیا گیا،جس میں مہمانِ خصوصی ارشاد متین ریجنل صدر PLB تھے۔سیمنار میں150 پارٹی ورکر،مزدوروں اور ٹریڈیونین نمائندوں نے شرکت کی۔ سیمینار سے عبدالر حمن عادل،عزیز خان ،ایاز شیرازی،شفیق ہاشمی،مہر اللہ وسایا،مسرت وہاب،حمیدہ بی بی ،حفیظ فیصل،ہارون پاشا،تنویر حسن،شاہد بلوچ سمیت دیگر لوگوں نے بھی خطاب کیا۔مقررین نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مزدوروں کے لیے بھٹو دور ہی پاکستانی تاریخ کا واحد سنہرا دور تھا،جس میں مزدوروں کے حق میں قوانین بنائے گئے تھے اور یوم مئی کی چھٹی کا اطلاق بھی بھٹو کے دورِ حکومت میں ہوا تھا۔ آج مزدوروں کے حالات بہت خراب ہیں اور ان کے حقوق کی جدوجہد آج بھی جاری ہے۔ پارٹی کا سوشلسٹ نظریات پر مبنی منشور میں مزدور طبقے کے تمام مصائب کا حل موجود ہے۔