ایپکا اکاؤنٹنٹ جنرل آفس لاہور کے صدر کا بہیمانہ قتل

[رپورٹ: PTUDC لاہور]
ایپکا AG آفس لاہور کے صدر بخش الٰہی کو گزشتہ صبح آفس آتے ہوئے نا معلوم افراد نے سرکلر روڈ پر گولیوں سے چھلنی کر دیا، جو بعد میں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے ہسپتال جاتے ہوئے زندگی کی بازی ہار گئے۔ لیکن ان کی زبان سے مرتے وقت بھی یہ الفاظ نکل رہے تھے کہ ’’یہ کام AG کا ہے‘‘ دریں اثنا یہ خبر جب AG آفس کے ملازمین تک پہنچی تو انہوں نے GPO چوک کو بند کر دیا اور یہ مطالبہ کیا کہ ان کے قائد کے قاتلوں کے خلاف نامزد ایف آئی آر درج کرتے ہوئے ان کو فوری طور پر گرفتار کیا جائے اور قاتلوں کو سر عام پھانسی دی جائے اور یہ احتجاج اس وقت ختم ہوا جب اکاؤنٹینٹ جنرل اسلم گجر اور ایڈیشنل اکاؤنٹینٹ جنرل کامران صدیق کے خلاف پولیس نے نامزد ایف آئی درج کی۔

اس موقع پر ایپکا AG آفس کے سیکرٹری جنرل ظفر کمبوہ نے کہا ہے کہ ہم اپنے قائد کے خون کا حساب لئے بنا چپ نہیں بیٹھیں گے اور اس مقصد کو اپنی زندگی کے آخری دم تک جاری رکھیں گے۔ بخش الٰہی اپنی ملازمت کے آخری مہینوں میں تھے اور دسمبر میں ریٹائرہونے والے تھے مگر انہوں نے کبھی بھی مزدوروں کے مقاصد سے غداری نہیں کی اور ہر طرح کے حالات میں مزدوروں کے حقوق اور مطالبات کے لئے لڑتے رہے اور یہی جرم ان کے لئے سزائے موت بن کر آ گیا۔ بخش الٰہی نے اپنی زندگی قربان کر دی لیکن کبھی مفاہمت نہیں کی۔ تفصیلات کے مطابق ایپکا کے ملازمین پچھلے 12 دن سے اپنے مطالبات کے حصول کے لئے ہڑتال پر تھے۔لیکن ارباب اختیار ان مطالبات کو ماننے کی بجائے مزدوروں کو ڈراتے دھمکاتے رہے اور قیادت کو مجبور کرتے رہے کہ ہڑتال کو فوری طور پر ختم کر دیا جائے دوسری صورت میں ان کو خطرناک نتائج کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔ اس کے ساتھ ہی اکاؤنٹینٹ جنرل مسلح غنڈوں کو اپنے ساتھ آفس میں لاتا رہا ہے جس پر ورکرز کو شدید تشویش رہی مگر اکاؤنٹینٹ جنرل نے ملازمین کی بات پر کان نہیں دھرا اور قیادت کو دھمکیاں دینا جاری رکھیں۔ گزشتہ سے پیوستہ روز ایپکا کی قیادت اور ارباب اختیار کے بیچ مذاکرات ہوئے جو کامیاب نہیں ہوئے اور بخش الٰہی نے ہڑتال ختم کرنے سے انکار کر دیا جس پر انتظامیہ نے انہیں سنگین نتائج کی دھمکی دی اور دوسری صبح بخش الٰہی کو قتل کروا دیا گیا۔

آج بخش الٰہی کی نمازِ جنازہ AG آفس میں ادا کی گئی جس میں ہزاروں کی تعداد میں ملازمین نے شرکت کی۔ نمازِ جنازہ کے بعد پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کیمپیئن (PTUDC) کی طرف سے کامریڈ آدم پال اور ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن (YDA) پنجاب کی طرف سے ڈاکٹر آفتاب اشرف نے AG آفس کے محنت کشوں کی جدوجہد میں ان کے ساتھ یکجہتی کا اعلان کیا اور کہا کہ شہید بخشی نے اپنی زندگی مزدوروں کے حقوق کے تحفظ کے لئے جنگ لڑتے ہوئے قربان کر دی اور شہید کا خون یہ تقاضا کرتا ہے کہ ہم ان کی جدوجہد کو آگے بڑھائیں اور اس وقت تک جنگ جاری رکھیں جب تک کہ یہ نظام جو اپنے حقوق کے تحفظ اور مسائل کے حل آواز اٹھانے والوں کو قتل کر دیتا ہے، حق اور سچ کی بات کرنے والوں پر تعزیریں لگاتا ہے اور محنت کشوں کی زندگیوں کے ساتھ ہولی کھیلتا ہے کو ختم کرتے ہوئے ایک مزدور سماج کا قیام عمل میں نہیں لاتے۔
کامریڈ آدم پال نے مزید کہا کہ ’’PTUDC اس بہیمانہ عمل کی مذمت کرتی ہے اور مطالبہ کرتی ہے کہ فوری طور پر بخش الٰہی کے نامزد قاتلوں AG اسلم گجر اور ایڈیشنل AG کامران صدیق کو فوری طور پر سزائے موت دی جائے ۔‘‘